الفاظ کی اپنی ہی ایک دنیا ہوتی ہے۔ ہر لفظ اپنی ذمہ داری نبھاتا ہے،
کچھ لفظ حکومت کرتے ہیں۔ ۔ ۔ 
کچھ غلامی۔ ۔ ۔
کچھ لفظ حفاظت کرتے ہیں۔ ۔ ۔ 
اور کچھ وار۔ ۔ ۔
ہر لفظ کا اپنا ایک مکمّل وجود ہوتا ہے ۔ جب سے میں نے لفظوں کو پڑھنے کے ساتھ ساتھ سمجھنا شروع کیا،
تو سمجھا 
لفظ صرف معنی نہیں رکھتے، 
یہ تو دانت رکھتے ہیں۔ ۔ ۔ جو کاٹ لیتے ہیں۔ ۔ ۔
یہ ہاتھ رکھتے ہیں، 
جو گریبان کو پھاڑ دیتے ہیں۔ ۔ ۔
یہ پاؤں رکھتے ہیں،
جو ٹھوکر لگا دیتے ہیں۔ ۔ ۔
اور ان لفظوں کے ہاتھوں میں لہجہ کا اسلحہ تھما دیا جائے،
تو یہ وجود کو چھلنی کرنے پر بھی قدرت رکھتے ہیں۔ ۔ ۔
اپنے لفظوں کے بارے میں محتاط ہوجائیں ....
انہیں ادا کرنے سے پہلے سوچ لیں کہ یہ کسی کے وجود کو سمیٹیں گے یا کرچی کرچی بکھیر دیں گے۔ ۔ ۔
کیونکہ.......
یہ ۔ ہما ری ادائیگی کے غلام ہیں اورہم ان کے بادشاہ ۔ ۔ ۔
اور بادشاہ اپنی رعایا کا ذمہ دار ہوتا ہے اور اپنے سے بڑے بادشاہ کو جواب دہ بھی۔..

.............

Views: 59

Comment

You need to be a member of VU HELP to add comments!

Join VU HELP


1st Sem
m . November 27, 2017 at 11:39pm

nice


3rd Sem
+ ғaтιмa . November 15, 2017 at 11:56pm

ammmm nyccc...jazakAllah..

SPONSORED LINKS

© 2018   Created by Muhammad Anwar Tahseen.   Powered by

Badges  |  Report an Issue  |  Terms of Service