بتاؤں گا میں کیا ہوں کیا نہیں ہوں
ابھی تو خود کو میں سمجھا نہیں ہوں

سمجھ میں کچھ نہیں آتا الاہی
میں ہوں موجود یا آخر نہیں ہوں

خودی مجھکو پرکھ کر رہ گئی ہے
خودی کو میں ابھی پرکھا نہیں ہوں

سراپا بن کے " میں " رہتے ہیں خود وہ
میں خود جس وقت پر رہتا نہیں ہوں

یہ کیا ہی خوب عالم بیخودی ہے
کبھی رہتا تو کبھی رہتا نہیں ہوں

مجھے کیا حق سے، ناحق کہہ رہے ہو
میں کیا توحید کا نقطہ نہیں ہوں

میری صورت مُصْور کی ہے 'رضوان '
یہ سچ تو ہے مگر ویسا نہیں ہوں


Views: 40

Reply to This

Replies to This Discussion

Wah
Kia bat hy jnb ki

:)

Khak hun me,
Khak ho jaun ga....

Bht Khoob ....

:)

RSS

SPONSORED LINKS

© 2018   Created by Muhammad Anwar Tahseen.   Powered by

Badges  |  Report an Issue  |  Terms of Service