روزہ کا مقصد اللہ کا قرب حاصل کرنا اور نفس کا مجاہدہ کرنا ہے۔

روزہ کا مقصد اللہ کا قرب حاصل کرنا اور نفس کا مجاہدہ کرنا ہے۔
رمضان مبارک اللہ کا قرب کا مہینہ ہے ۔اور رب نے اس رحمت والے مہینے میں روزے فرض کیے۔
لقمہ اور پانی یہ چیزیں دنیاوی ہیں جب انسان کے اندر اترتی ہے تو بندے کے نفس پر دنیا کو مسلط کرتی ہے ۔
اللّٰہ کا قرب کا نزول اس سینے پہ نازل ہوتا ہے جسکا نفس غیر سے محفوظ ہو اور اللہ کے ذکر و یاد میں مشغول ہو ۔ جب لقمے اور پانی سے نفس پہ دنیا جمنا شروع ہوتی ہے تو اسکا نفس غیر کی طرف متوجہ رہنے لگتا اور رب سے غافل ہونے لگتا۔
جو اللّٰہ کے محبوب بندے ہوتے ہیں اور جو پردہ فرما گیے انہوں نے اپنے نفس کے ساتھ سخت مجاہدات کیے ہیں ک قرب کے مقام میں وہ وہاں تک پہنچے ہیں ک وہ جانیں انکا رب جانے ،ہم انداذہ بھی نہیں لگا سکتے۔
اللّٰہ نے رمضان مبارک کا مہینہ دیکر ہم پہ احسان کیا ک ہم کمزور بندے اللہ کے قرب و محبت کی طرف رجوع کریں۔
جب سالک (جسکا مرشد کامل اکمل مکمل ہو) رمضان کے مہینے میں داخل ہوتا ہے تو اسکا نفس لقموں ، پانی اور دیگر چیزوں کی طرف متوجہ نہیں ہوتا ۔
وہ عبادت کرتا ہے اپنے رب کی یاد و ذکر سے اور اپنے نفس کو غیر سے بچاتا ہے۔
جو کسی اولیاء اللہ سے نسبت نہیں رکھتے جو کسی کے مرید نہیں انکا حال ایسا ک انکا نفس ہر دنیاوی چیز کی طرف لپکتا ہے ۔اور افطار کے وقت یہ اپنے نفس کو سیراب کرتے ہیں۔ جبکہ سالک ایک لقمہ سے طوانای حاصل کر لیتا اور رب کی بارگاہ میں حاضری دیتا الحمدللہ رب العالمین۔۔

Views: 34

Reply to This

SPONSORED LINKS

© 2018   Created by Muhammad Anwar Tahseen.   Powered by

Badges  |  Report an Issue  |  Terms of Service